ڈی جی سندھ رینجرز، آئی جی سندھ کو ہٹائیں

Posted by on Jun 10, 2011 | Comments Off on ڈی جی سندھ رینجرز، آئی جی سندھ کو ہٹائیں

پاکستان کے صوبہ سندھ کے شہر کراچی میں رینجرز کے ہاتھوں نوجوان کے قتل پر چیف جسٹس سپریم کورٹ افتخار محمد چوہدری نے سیکریٹری داخلہ کو احکامات دیے ہیں کہ ڈی جی سندھ رینجرز اور آئی جی سندھ کو فوری طور پر ہٹایا جائے۔

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے یہ احکامات اس واقعے کا از خود نوٹس کی سماعت کے دوران دیے۔

اس مقدمے کی سماعت چیف جسٹس سمیت جسٹس جاوید اقبال، جسٹس نصیرالملک، جسٹس طارق پرویز اور جسٹس عامر ہانی مسلم کر رہے ہیں۔

چیف جسٹس نے سیکریٹری داخلہ سے کہا کہ ان دونوں افسران کو آج ساڑھے بارہ بجے تک ہٹا دیا جائے ورنہ اس حوالے سے سپریم کورٹ احکامات جاری کرے گی۔

کراچی سے ہمارے نامہ نگار ریاض سہیل نے بتایا ہے کہ نوجوان کے قتل کے الزام میں سندھ رینجرز حکام نے دو اہلکاروں کو پولیس کے حوالے کردیا ہے۔
پولیس نے دونوں کو جمعہ کی صبح جڈیشل مجسٹریٹ جنوبی اسد رضا بھٹو کی عدالت میں پیش کیا اور ملزمان سے تفتیش کے لیے جسمانی ریمانڈ کی درخواست کی۔

سرفراز شاھ کے بھائی سالک شاھ نے دونوں رینجرز اہلکاروں پر قتل کا مقدمہ درج کرایا تھا۔ شاہد ظفر اور محمد افضل نامی ان اہلکاروں کو رینجرز نے بوٹ بیسن تھانے کے حوالے کیا۔

پولیس نے دونوں کو جمعہ کی صبح جڈیشل مجسٹریٹ جنوبی اسد رضا بھٹو کی عدالت میں پیش کیا اور ملزمان سے تفتیش کے لیے جسمانی ریمانڈ کی درخواست کی۔

عدالت نے پولیس کی درخواست منظور کرکے دو اہلکاروں کو پانچ روز کے لیے ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔

اسلام آباد سے ہمارے نامہ نگار ذوالفقار علی نے بتایا کہ بین الاقوامی انسانی حقوق کی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے کراچی میں رینجرز کے ہاتھوں ہلاک ہونے والے پاکستان نوجوان کے قتل کی تحقیقات غیر جانبدارانہ اور بھر پور ہونی چاہیے تاکہ اس جرم میں ملوث افراد کو سزا مل سکے۔

پاکستان میں ہلاکتوں کے ایسے واقعات پر قانونی کارروائی کا ریکارڈ حیران کن حد تک خراب ہے جن میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے افسر ملوث ہوں۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل کے ایشیا پیسیفک کے ڈائریکڑ سیم ظریفی نے اپنے بیان میں کہا پاکستان میں ہلاکتوں کے ایسے واقعات پر قانونی کارروائی کا ریکارڈ حیران کن حد تک خراب ہے جن میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے افسر ملوث ہوں۔

انھوں نے کہا کہ اس بات کی ضرورت ہے کہ حکام اس معاملے کی پوری چھان بین کریں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ مجرموں کو قرار واقعی سزا دی جائے۔

انھوں نے کہا پاکستان میں بڑھتی ہوئی لاقانونیت اور سکیورٹی فورسز کی من مانی کے پیش نظر عوام کا پیمانہ صبر لبریز ہورہا ہے۔

انھوں نے کہا کسی مرحلے پر حکومت کو دکھانا پڑے گا کہ یہ شہریوں کو انصاف مہیا کرسکتی ہے اور کرے گی اور ان معاملوں میں بھی جن میں قانون نافذ کرنے والے اہلکار ملوث ہوں۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–