ہلال احمر کے دفتر کی قریب دھماکہ

Posted by on Jun 26, 2011 | Comments Off on ہلال احمر کے دفتر کی قریب دھماکہ

پاکستان کے صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی کے علاقے ٹیپو سلطان روڈ پر واقع عالمی امدادی ادارے ریڈ کراس یعنی ہلال احمر کی عمارت کے قریب ایک بم دھماکہ ہوا ہے۔ دھماکے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔
کراچی پولیس کے قائم مقام سربراہ ڈی آئی جی اقبال محمود نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے بی بی سی کو بتایا کہ اگرچہ دھماکہ تقریبا دو کلوگرام وزنی مواد سے کیا گیا لیکن اس واقعے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔
ڈی آئی جی اقبال محمود کا کہنا ہے کہ دھماکے کا ممکنہ ہدف بھی بظاہر ہلال احمر کی عمارت ہی دکھائی دیتی ہے لیکن خوش قسمتی سے صرف بم کے سرکٹ کا ڈیٹونیٹر ہی پھٹا اور اس کے ساتھ منسلک دھماکہ خیز مواد نہیں پھٹ سکا۔
ٹیپو سلطان روڈ شہر کے مشرقی مگر متمول سمجھے جانے والے علاقے میں ہے۔ یہ مقام تھانہ بہادر آباد کی حدود میں انتظامی طور پر گلشن اقبال ٹان کا حصہ ہے۔
جہاں دھماکہ ہوا اس کے قریب ہی قومی ادارے نیشنل ڈیٹابیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی یا نادرا کا دفتر بھی واقع ہے۔
نادرا وہ ادارہ ہے جو شہریوں کو شناختی دستاویزات جاری کرتا ہے یا ان کا ریکارڈ محفوظ رکھتا ہے۔
یہی ادارہ کسی واقعے کی صورت میں شہریوں یا ملزمان اور ہلاک و زخمی ہونے والوں یا خودکش حملہ آوروں کی شناخت کے لیے تکنیکی مدد یا شناختی سہولیات فراہم کرتا ہے۔

حال ہی میں کراچی میں بحریہ کی ائر بیس پی این مہران پر حملہ آوروں کی شناخت کی مدد بھی نادرا ہی نے فراہم کی تھی
حال ہی میں کراچی میں بحریہ کی ائر بیس پی این مہران پر حملہ آووروں کی شناخت کی مدد بھی نادرا ہی نے فراہم کی تھی۔
لیکن ڈی آئی جی اقبال محمود سمیت کئی پولیس افسران، خاص طور پر انسداد دہشت گردی سے متعلق افسران کاخیال بھی یہی ہے کہ سنیچر کے دھماکے کا ہدف نادرا نہیں بلکہ ممکنہ طور پر ہلال احمر کا دفتر ہی ہو سکتا ہے۔
تقریبا چوبیس گھنٹے قبل ہی پولیس نے ایک شہری کی اطلاع پر جنوبی علاقے میں واقع جناح ہسپتال کے رہائشی حصے میں نماز کی ادائیگی کے لیے مخصوص جگہ پر بھی ایک بم دھماکے کی کوشش ناکام بنائی تھی۔
جس جگہ جناح ہسپتال میں بم رکھا گیا تھا، وہ اہل تشیع کے لیے نماز جمہ کی ادائیگی کے لیے مخصوص ہے۔
پولیس کے مطابق اس بم کا وزن تیس سے بیالیس کلوگرام کے درمیان تھا اور پھٹ جانے کی صورت میں زبردست جانی نقصان ہو سکتا تھا۔
جمعہ ہی کو پولیس نے شدت پسند کالعدم تنظیم تحریک طالبان پاکستان کے ایک اور کالعدم تنظیم جند اللہ کے دو کارکنوں کی گرفتاری ظاہر کرتے ہوئے دعوی کیا تھا کہ ان تینوں سے اسلحہ اور بارودی مواد برآمد کیا گیا ہے اور دہشت گردی کے منصوبے ناکام بنا دیے گئے ہیں۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here