پاکستان نے چار سو راکٹ داغے ہیں: کرزئی

Posted by on Jun 27, 2011 | Comments Off on پاکستان نے چار سو راکٹ داغے ہیں: کرزئی

افغانستان کے صدر حامد کرزئی نے افغانستان کے سرحدی علاقے میں گزشتہ چند ہفتوں کے دوران پاکستان کی جانب سے چار سو ستر راکٹ داغے جانے کا الزام لگایا ہے جس میں افغان حکم کے مطابق بارہ بچوں سمیت چھتیس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔
افغان حکام کے مطابق پاکستان کی سکیورٹی فورسز کی جانب سے یہ حملے کنڑ اور نگرہار صوبے میں کیے گئے جہاں سے نیٹو افواج پہلے ہی نکل چکی ہیں۔
افغان حکام کے مطابق پاکستانی طالبان ان علاقوں میں گھس آئے ہیں۔
حامد کرزئی نے یہ معاملہ صدر آصف علی زرداری کے ساتھ تہران میں اٹھایا۔ ان دنوں یہ دونوں رہنما تہران میں دہشت گردی کے خلاف ایک علاقی کانفرنس میں شرکت کر رہے ہیں۔
افغان وزرات دفاع کے ایک ترجمان نے کہا ہے کہ افغانستان کی سکیورٹی شہریوں کی ہلاکتوں کی صورت میں جوابی کارروائی کرنے پر مجبور ہوں گی۔
یاد رہے کہ افغانستان کے سرحدی صوبوں سے طالبان نے منظم ہو کر پاکستان کے شمالی علاقوں میں سکیورٹی فورسز کی چوکیوں پر حملے کیے تھے جس کے بعد پاکستان کی سکیورٹی فورسز نے ان طالبان کے خلاف جوابی کارروائی کی تھی۔
امریکی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق صدر کرزئی کے صدارتی محل سے جاری ہونے والے بیان میں اس بات کا اشارہ دیا گیا ہے کہ افغانستان کے علاقے پر ہونے والی بمباری کی ذمہ دار پاکستان کی سکیورٹی فورسز ہیں اور بمباری کا یہ سلسلہ فوری طور پر بند ہونا چاہیے۔ بیان میں مزید کہا گیا کہ اگر پاکستان کی سکیورٹی فورسز اس کی ذمہ دار نہیں ہیں تو انھیں یہ واضح کرنا چاہیے کے اس بمباری کے ذمہ دار کون ہیں۔دریں اثنا نیٹو حکام نے بتایا ہے کہ مغربی، مشرقی اور جنوبی افغانستان میں شدت پسندوں کے تین مختلف حملوں میں پانچ غیر ملکی فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔ نیٹو حکام نے اس بارے میں مزید کوئی تفصیل فراہم نہیں کی۔ ان ہلاکتوں سے جون کے مہینے میں نیٹو کے ہلاک ہونے والے فوجیوں کی تعداد تریپن ہو گئی ہے جبکہ اس سال اب تک دو سو فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔
افغان صدارتی ترجمان محمد ظاہر اعظی نے کہا ہے کہ پاکستان کی طرف سے بمباری کے جواب میں افغان فورسز نے خوست اور پکتیکا کے علاقوں میں جمعہ کو کم از کم دو مرتبہ سرحد پار بمباری کی۔ افغان سیکیورٹی حکام کے مطابق سترہ جون کو نیٹو افواج نے بھی پاکستان کی سرحد کے پار بمباری کی تھی

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here