ولیم ہیگ کے لیبیائی باغیوں سے مذاکرات

Posted by on Jun 05, 2011 | Comments Off on ولیم ہیگ کے لیبیائی باغیوں سے مذاکرات

برطانیہ کے وزیرِ خارجہ ولیم ہیگ لیبیا میں باغیوں سے مذاکرات کرنے کے لیے بن غازی پہنچ گئے ہیں جہاں انہوں نے ملک کے سیاسی نقش راہ کے بارے میں بات چیت کی ہے۔

ولیم ہیگ نے عبوری قومی کونسل کے صدر مصطفی عبدل جلیل سے ملاقات کی۔ کرنل قذافی کے خلاف تازہ پیش رفت اور لیبیا کے عوام کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے برطانوی مدد بات چیت کا محور رہی۔

برطانوی وزیر خارجہ نے بن غازی میں ایک ہسپتال کا بھی دورہ کیا۔

ادھر کرنل قذافی کی حکومت نے برطانوی وزیر خارجہ کے اس دورے کو غیر قانونی قرار دیا ہے۔ سرکاری خبر رساں ایجنسی سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ ولیم ہیگ کا دورہ ایک خود مختار ملک کے اندرونی معاملات میں مداخلت ہے۔

لیکن سنیچر کو باغیوں کے گڑھ بن غازی پہنچنے سے پہلے ہی ولیم ہیگ کہہ چکے ہیں کہ لیبیا میں باغیوں کی جانب سے تشکیل دی گئی اقتدار کی منتقلی کی قومی کونسل ہی لیبیا کے عوام کی قانونی نمائندگی کر رہی ہے۔

ولیم ہیگ کا کہنا تھا کہ میرے بن غازی آنے کی ایک اصولی وجہ ہے اور وہ یہ کہ ہم لیبیا کے عوام اور قومی کونسل کی جانب اپنی حمایت کا اظہار کرنا چاہتے ہیں۔

ان کے بقول یہ دورہ لیبیا کی جانب سٹریٹجک سوچ اور مربوط کوششوں کا حصہ ہے اور اس بات کو یقینی بناتا ہے کہ برطانیہ کی فوج اور سفارتی حلقے لیبیا کے ساتھ ہم آہنگ ہیں۔

ان کا کہنا تھا برطانیہ اس عمل میں پرعزم ہے۔ کرنل قذافی ملکی سطح پر اور بین الاقوامی سطح پر تنہا ہوچکے ہیں۔ وہ تمام قانونی جواز کھو چکے ہیں، جبکہ وہ انسانی حقوق کو مسلسل پامال کررہے ہیں۔ انہیں ضرور جانا چاہیے۔

دریں اثنا نیٹو نے تصدیق کی ہے کہ برطانیہ کے اپاچی ہیلی کاپٹر لیبیا پر پہلی بار پرواز کر رہے ہیں۔ ایچ ایم ایس اوشین کے کیپٹن نے بی بی سی کو بتایا کہ اِن ہیلی کاپٹروں نے دو فوجی تنصیبات، ایک ریڈار اور مسلح اہلکاروں کی ایک چوکی کو نشانہ بنا کر تباہ کر دیا ہے۔

بدھ کو نیٹو نے لیبیا میں اپنے مشن کو نوے روز کے لیے توسیع دے دی تھی۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here