نیٹو سپلائی کی بحالی کے بعد پہلا ڈرون حملہ، نو ہلاک

Posted by on Jul 07, 2012 | Comments Off on نیٹو سپلائی کی بحالی کے بعد پہلا ڈرون حملہ، نو ہلاک

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں حکام کے مطابق امریکی جاسوس طیارے کے حملے میں نو افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

پاکستان کی جانب سے افغانستان میں تعینات نیٹو افواج کو زمینی راستے سے رسد کی بحالی کے بعد یہ پہلا ڈرون حملہ ہے۔

شمالی وزیرستان میں مقامی انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ ڈرون حملہ صدر مقام میرانشاہ سے چالیس کلومیٹر دور تحصیل دتہ خیل کے علاقے زوئی نراے میں کیا گیا۔

اہلکار نے بتایا کہ جمعہ کی شب کو ڈرون طیارے سے دو میزائل مقامی طالبان کمانڈر حافظ گل بہادر کے جنگجوؤں کے زیر استعمال ایک کمپاؤنڈ پر داغے گئے۔

انہوں نے کہا کہ ڈرون حملے میں کم از کم نو شدت پسند ہلاک اور دو زخمی ہو گئے ہیں۔

جس جگہ پر ڈرون حملہ ہوا ہے وہ پاک افغان سرحد کے قریب واقع ہے۔

امریکہ کو قائل کریں گے

پاکستان اور امریکہ کے درمیان ڈرون حملوں کے بارے میں کافی تناؤ پایا جاتا ہے۔ پاکستان کا کہنا ہے کہ ڈرون حملے ملکی خودمختاری کے خلاف ہیں اور وہ کئی بار باضابطہ طور پر امریکہ سے احتجاج کر چکا ہے۔

پاکستان کی مختلف سیاسی اور مذہبی جماعتیں بھی ملک میں ڈرون حملوں کے خلاف احتجاج کرتی رہی ہیں۔

بدھ کو پاکستان کے وفاقی وزیر اطلاعات نے ایک اخباری کانفرس میں نیٹو سپلائی کی بحالی کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ ڈرون حملوں کے حوالے سے امریکہ کے ساتھ مذاکرات جاری رہیں گے اور ان کو قائل کریں گے کہ ڈرون حملے پاکستان کی خودمختاری پر حملہ ہیں اس لیے ان کو روکا جائے۔

ُادھر امریکہ کا کہنا ہے کہ ڈون حملے شدت پسندوں کے خلاف جنگ میں ایک موثر ہتھیار ثابت ہو رہے ہیں اور ان حملوں کا قانونی اور اخلاقی جواز موجود ہے۔

بدھ کو پاکستان کے وفاقی وزیر اطلاعات نے ایک اخباری کانفرس میں نیٹو سپلائی کی بحالی کا باضابط اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ ڈرون حملوں کے حوالے سے امریکہ کے ساتھ مذاکرات جاری رہیں گے اور ان کو قائل کریں گے کہ ڈرون حملے پاکستان کی خودمختاری پر حملہ ہے اس لیے ان کو روکا جائے۔

اقوامِ متحدہ کے ادارہ برائے انسانی حقوق کی سربراہ نوی پِلے نے پاکستان کی سرزمین پر امریکی ڈرون حملوں کی تحقیقات کی پر زور دیتے ہوئے کہا تھا کہ جس طریقے سے یہ حملے کیے جا رہے ہیں اس سے بین الاقوامی قانون کے تحت سوالات جنم لے رہے ہیں۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here