نوجوان کی ہلاکت، اسمبلیوں میں احتجاج

Posted by on Jun 10, 2011 | Comments Off on نوجوان کی ہلاکت، اسمبلیوں میں احتجاج

پاکستان کے وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کراچی میں رینجرز اہلکاروں کے ہاتھوں ایک نوجوان سرفراز شاہ کی ہلاکت کا نوٹس لیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ذاتی طور پر تحقیقات کی نگرانی کریں گے اور ملزمان کو انصاف کے کٹہرے میں لائیں گے۔

انہوں نے یہ اعلان جمعرات کو قومی اسمبلی میں اس وقت کیا جب مسلم لیگ (ن) کے خواجہ سعد رفیق نے انتہائی سخت الفاظ میں رینجرز کے اہلکاروں کی مذمت کرتے ہوئے اس واقعہ کو ریاستی دہشت گردی قرار دیا

ادھر ڈی جی رینجرز کا کہنا ہے کہ کسی بھی اہلکار کو نہتے شہری پرگولی چلانے کا اختیار نہیں اور اس واقعے میں ملوث رینجرز اہلکاروں کوگرفتار کر کے انکوائری کے لیے تین رکنی کمیٹی بنا دی گئی ہے۔
فوٹیج میں ایک شخص ایک نوجوان کو بالوں سے پکڑ کر پارک کے اندر سے لاتا ہے اور اسے رینجرز اہلکاروں کے سامنے دھکیل دیتا ہے۔ وہ نوجوان رینجرز اہلکاروں کے سامنے اپناموقف بیان کرتے ہوئے آگے بڑھنے کی کوشش کرتا ہے جس دوران اہلکار اسے رائفل کی نوک سے پیچھے دھکیلتے ہیں اور پھر دو فائر ہوتے ہیں اور نوجوان تڑپنے لگتا ہے اور اس کے بازو اور بائیں ران سے تیزی سے خون بہنے لگتا ہے۔

اسلام آباد میں  یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ اس واقعے پر پوری قوم کو افسوس اور تشویش ہے اور اس میں ملوث ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ ہر چیز میں ہمیں رد عمل کا اظہار کرنا چاہیے مگر ایک دائرہ کار میں رہتے ہوئے فوری طور پر کسی ادارے کے خلاف غیر شائستہ زبان استعمال نہیں کرنی چاہیے۔

اس سے قبل مسلم لیگ (ن) کے خواجہ سعد رفیق نے کہا یہ ریاستی دہشتگردی ہے اور رینجرز کے وردی پوش دہشتگردوں نے ایک ماں سے بیٹا چھین لیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رینجرز کے اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج ہوا ہے لیکن وہ اپنی ہی فورس کی تحویل میں ہیں اور انہیں فوری طور پر پولیس کے حوالے کیا جائے اور ان پر انسدادِ دہشتگردی کی عدالت میں مقدمہ چلایا جائے۔

رینجرز کے ہاتھوں سرفراز شاہ نامی نوجوان کی ہلاکت کا واقعہ بدھ کی شام کراچی میں بینظیر بھٹو پارک کلفٹن کے علاقے میں پیش آیا تھا۔

کراچی  جائے وقوع پر اتفاقا موجود سندھی ٹی وی چینل آواز کے کیمرہ مین نے اس سارے منظر کو کیمرہ کی آنکھ میں محفوظ کر لیا تھا۔

اس فوٹیج میں ایک شخص ایک نوجوان کو بالوں سے پکڑ کر پارک کے اندر سے لاتا ہے اور اسے رینجرز اہلکاروں کے سامنے دھکیل دیتا ہے۔ وہ نوجوان رینجرز اہلکاروں کے سامنے اپناموقف بیان کرتے ہوئے آگے بڑھنے کی کوشش کرتا ہے جس دوران اہلکار اسے رائفل کی نوک سے پیچھے دھکیلتے ہیں اور پھر دو فائر ہوتے ہیں اور نوجوان تڑپنے لگتا ہے اور اس کے بازو اور بائیں ران سے تیزی سے خون بہنے لگتا ہے۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here