ملک ریاض کے الزامات، رجسٹرار سپریم کورٹ کی تردید

Posted by on Jun 14, 2012 | Comments Off on ملک ریاض کے الزامات، رجسٹرار سپریم کورٹ کی تردید

ڈاکٹر فقیر حسین نے اس ضمن میں مزید وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملاقاتیں ججوں کی بحالی کے معاملے میں مسلم لیگ نواز اور پیپلز پارٹی کے درمیان طے پانے والے معاہدے کے تناظر میں ہوئی تھیں۔

گزشتہ روز منگل کو سپریم کورٹ آف پاکستان کے رجسٹرار نے ملک ریاض کی جانب سے چیف جسٹس افتخار محمدچوہدری سے رات کے اندھیروں میں ملاقاتوں سمیت دیگر الزامات کی تردید کی ہے اور کہا ہے کہ ارسلان افتخار کو مبینہ طور پر پہنچائے گئے مالی فوائد سے ان کے والد، افتخار محمد چوہدری لا علم تھے۔

قبل ازیں سپریم کورٹ میں اس معاملے کی سماعت کے دوران جمع کروائے گئے بیان میں ملک ریاض نے الزام لگایا کہ ارسلان افتخار نے سنہ دو ہزار دس اور گیارہ کے دوران مبینہ طور پر ان سے چونتیس کروڑ پچیس لاکھ روپے کی رقم زبردستی ہتھیا لی۔

ملک ریاض کی جانب سے جو بیان جمع کروایا گیا ہے اُس میں ڈاکٹر ارسلان کے سنہ دو ہزار دس اور گیارہ میں برطانیہ اور مونٹی کارلو کے دورے پر اُٹھنے والے اخراجات کی ادائیگی سے متعلق دستاویزات شامل ہیں۔

عدالت نے اُن کے وکیل سے یہ پوچھا کہ جب رقم سلمان نے ادا کی ہے تو ڈاکٹر ارسلان اُنہیں کیسے بلیک میل کر رہے ہیں جس کا وہ جواب نہ دے سکے۔

ملک ریاض کے کاروباری شراکت دار احمد خلیل کے گھر پر وزیراعظم اور چیف جسٹس کی ملاقاتوں کے بارے میں دعوے پر ڈاکٹر فقیر حسین نے کہا کہ ممکن ہے کہ لاہور میں کسی سماجی تقریب میں دونوں شخصیات ملی ہوں اور وزیراعظم سے چیف جسٹس کی ملاقاتیں تو ریکارڈ پر ہیں۔

ملک ریاض کے بقول چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کے بیٹے کو مختلف اوقات میں تیس کروڑ روپے سے زائد کی رقم ادا کی گئی لیکن یہ رقم اُنہوں نے نہیں بلکہ اُن کے داماد نے دی۔

بینچ میں موجود جسٹس خلجی عارف حسین نے ملک ریاض کے وکیل کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ایسا دکھائی دیتا ہے کہ وہ انصاف مانگنے نہیں بلکہ خریدنے آئے ہیں۔


وزیراعظم سے ملاقاتیں تو ریکارڈ پر ہیں

ملک ریاض کے کاروباری شراکت دار احمد خلیل کے گھر پر وزیراعظم اور چیف جسٹس کی ملاقاتوں کے بارے میں دعوے پر ڈاکٹر فقیر حسین نے کہا کہ ممکن ہے کہ لاہور میں کسی سماجی تقریب میں دونوں شخصیات ملی ہوں اور وزیراعظم سے چیف جسٹس کی ملاقاتیں تو ریکارڈ پر ہیں

ملک ریاض کے کاروباری شراکت دار احمد خلیل کے گھر پر وزیراعظم اور چیف جسٹس کی ملاقاتوں کے بارے میں دعوے پر ڈاکٹر فقیر حسین نے کہا کہ ممکن ہے کہ لاہور میں کسی سماجی تقریب میں دونوں شخصیات ملی ہوں اور وزیراعظم سے چیف جسٹس کی ملاقاتیں تو ریکارڈ پر ہیں۔

سپریم کورٹ کے رجسٹرار ڈاکٹر فقیر حسین نے منگل کو چیف جسٹس کی ذات پر ملک ریاض کے عدالت میں بیان اور اس کے بعد ایک پریس کانفرنس میں لگائے گئے الزامات کا جواب دیا۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here