سیاچن کے مسئلے پر پاکستان کو پہل کرنی چاہیے: نواز شریف

Posted by on Apr 17, 2012 | Comments Off on سیاچن کے مسئلے پر پاکستان کو پہل کرنی چاہیے: نواز شریف

پاکستان میں حزبِ اختلاف کی سب سے بڑی جماعت پاکستان مسلم لیگ نون کے قائد میاں نواز شریف نے کہا ہے کہ سیاچن کے مسئلے کے حل کے لیے پاکستان کو پہل کر دینی چاہیے۔

میاں نواز شریف منگل کو بلتستان ڈویژن کی وادیِ سیاچن میں گیاری سیکٹر کے دورے پر گئے جہاں سات اپریل کو گلیئشیر کا تودہ گرنے سے فوج کی سِکس این ایل آئی بٹالک صدر دفتر دب گیا تھا۔

تودے کے نیچے دبے ہوئے ایک سو انتالیس اہلکاروں کو نکالنے کے لیے گیاری سیکٹر میں فوج کا آپریشن جاری ہے۔

میاں نواز شریف گیاری سیکٹر کا صرف فضائی معائنہ ہی کر سکے کیونکہ انہیں وہاں ہیلی کاپٹر نہ اتارنے کا مشورہ دیا گیا تھا۔

گیاری سیکٹر کے فضائی معائنے کے بعد سکردو میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے میاں نواز شریف نے فوج کے ریسکیو آپریشن کی تعریف کی البتہ انہوں نے زور دیا کہ بھارت کے ساتھ سیاچن کے مسئلے کے حل کا وقت آ گیا ہے۔

’میرا خیال ہے کہ پاکستان کی حکومت کو پہل کر دینی چاہیے۔ بھارت کی طرف سے پہل کا انتظار نہیں کرنا چاہیے۔ اس میں کوئی انا کا مسئلہ نہیں ہے۔‘

حزبِ اختلاف کے رہنما نے سیاچن کے متنازع محاذ کی رکھوالی کو دشمن کی بجائے موسم کے ساتھ جنگ قرار دیا۔

’یہاں کیا ہو رہا ہے؟ موسم کے ساتھ ہم ایک طرح کی جنگ کر رہے ہیں۔ اس میں زخمی ہو رہے ہیں۔ اعضا ختم ہو رہے ہیں، ہاتھ جھڑتے ہیں، انگلیاں جھڑتی ہیں، پاؤں جھڑتے ہیں، فراسٹ بائیٹ ہوتی ہے، پھر اتنے لوگ شہید ہو جاتے ہیں۔‘

میاں نواز شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان سیاچن کے تنازعے کا حل دو طرفہ تجارت سے زیادہ اہم ہے۔

’دنیا میں کونسی فوجیں ان چوٹیوں پر رہتی ہیں۔ حکومتوں کا فرض ہے کہ یہ مسائل حل کریں۔ تجارت سے زیادہ ضروری ہے کہ ان مسائل کو حل کیا جائے۔‘

پاکستان مسلم لیگ نون کے قائد میاں نواز شریف نے مطالبہ کیا کہ دونوں ممالک سیاچن کے محاذ سے اپنی فوجیں واپس بلا لیں۔

’دونوں ممالک کو چاہیے کہ بیٹھ کر اس مسئلے کا باہمی حل نکالیں اور فوجیں یہاں سے نکالیں۔ اربوں روپے ہندوستان بھی خرچ کر رہا ہے۔ ہم بھی خرچ کر رہے ہیں یا کرنے پڑ رہے ہیں۔ میرا خیال ہے کہ یہ اب ایک دوسرے پر بازی یا سبقت لے جانے کا کھیل نہیں ہے۔‘

گیاری سیکٹر کے فضائی معائنے کے بعد سکردو میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میاں نواز شریف نے بتایا: ’یہاں پر آج صبح ہمیں بتایا گیا کہ نیچے کچھ لوگ ایسے ہو سکتے ہیں جو زندہ سلامت ہوں، لیکن ابھی وثوق سے نہیں بتایا گیا۔ ہمیں بتایا گیا کہ احتیاط یہی ہے کہ یہاں پر (ہیلی کاپٹر) نہ اتارا جائے تاکہ تھرتھراہٹ سے گلیشیر یا برف نہ ہل جائے۔

میاں نواز شریف قومی سطح کے پہلے سیاسی قائد ہیں جنہوں نے فضائی معائنے کی حد تک گیاری سیکٹر کا دورہ کیا ہے۔

منگل کو صدرِ پاکستان آصف علی زرداری بھی گیاری سیکٹر کا دورہ کرنے والے تھے لیکن اُن کا دورہ سکردو میں تمام تر تیاریوں کے باوجود دوسری مرتبہ ملتوی کر دیا گیا ہے۔ انہیں پیر کو گیاری سیکٹر کا دورہ کرنا تھا اور اب امکان ہے کہ وہ بدھ کو سکردو پہنچیں گے۔

 

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here