سمارٹ فون، لیپ ٹاپ صحت کیلیے اچھے نہیں

Posted by on Jun 19, 2012 | Comments Off on سمارٹ فون، لیپ ٹاپ صحت کیلیے اچھے نہیں

ایک تحقیق کے مطابق وہ لوگ اپنی صحت خراب کر رہے ہیں جو دفتر کے بعد بھی اپنے سمارٹ فونز، ٹیبلیٹس اور لیپ ٹاپس پر کام کرتے رہتے ہیں۔

چارٹرڈ سوسائٹی آف فیزیوتھراپی کے مطابق لوگ ان آلات کے ’غلام‘ بن کر رہ گئے ہیں اور اکثر یہ لوگ سفر کرتے وقت یا گھر پر بھی سمارٹ فونز، ٹیبلیٹس اور لیپ ٹاپس کا استعمال کر رہے ہوتے ہیں۔

’اگر تو لوگ کبھی کبھار دفتری کام گھر لے جائیں تو ٹھیک ہے لیکن اگر یہ عادت بن جائے تو کمر اور گردن کا درد ہو سکتا ہے۔ حہ خاص طور پر اس وقت صحت کے لیے مضر ہے جب لوگ ہاتھ میں لیے جانے والے آلات استعمال کر رہے ہوتے ہیں اور جس طرح بیٹھے ہیں اس کا خیال نہیں کرتے۔‘

سوسائٹی کے بقول یہ آلات استعمال کرتے وقت وہ کس طرح بیٹھے یا لیٹے ہوتے ہیں اس کی وجہ سے ان کو کمر یا گردن کا درد ہو سکتا ہے۔

اعداد و شمار کے مطابق لوگ زیادہ وقت سمارٹ فونز، ٹیبلیٹس اور لیپ ٹاپس پر اس لیے بھی گزار رہے ہیں کہ ایک تو ان پر کام کا بوجھ بہت ہے اور وہ دفتر میں کام کا بوجھ کم کرنے کے لیے دفتری اوقات کے بعد کام کرتے ہیں۔

یونینز کا کہنا ہے کہ لوگوں کو اب جان لینا چاہیے کہ کس وقت اپنے آلات بند کردیے جانے چاہیے۔

ایک آن لائن سروے کے مطابق 2010 نوکری کرنے والے افراد میں سے دو تہائی افراد کا کہنا تھا کہ وہ دفتری اوقات کے بعد بھی سمارٹ فونز، ٹیبلیٹس اور لیپ ٹاپس استعمال کرتے ہیں۔

سوسائٹی کے مطابق دفتری اوقات کے بعد بھی لوگ اوسطاً دو گھنٹے سکرینز کے سامنے گزارتے ہیں۔

سوسائٹی کی سربراہ ڈاکٹر ہیلینا جانسن کا کہنا ہے کہ یہ تشویشناک بات ہے۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here