سلمان کی برطانوی جیل سے رہائی اور واپسی

Posted by on Jun 22, 2012 | Comments Off on سلمان کی برطانوی جیل سے رہائی اور واپسی

سپاٹ فکسنگ کے جرم میں برطانوی جیل میں قید پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان سلمان بٹ کو قید کی مدت کے خاتمے سے قبل رہا کر دیا گیا۔

رہائی کے بعد سلمان بٹ جمعرات اور جمعہ کی درمیانی رات پاکستان پہنچ رہے ہیں۔

سلمان بٹ کے وکیل یاسین پٹیل نے کہا کہ گزشتہ کئی ماہ سے سلمان بٹ شدید دباؤ اور مشکلات کا شکار رہے۔ انہوں نے کہا کہ اب وہ اپنے خاندان اور رشتے داروں کے ساتھ وقت گزار سکیں گے۔

اسی مقدمے میں چھ ماہ کی سزا پانے والے محمد عامر پہلے ہی رہا ہو کر پاکستان آ چکے ہیں جبکہ ایک سال کی پابندی کی سزا پانے والے محمد آصف مئی میں رہا ہونے کے بعد ابھی لندن ہی میں موجود ہیں اور آئی سی سی کی جانب سے سات سال کی پابندی کی سزا کے خلاف اپیل دائر کرنے کی تیاری کر رہے ہیں۔

سلمان بٹ کی رہائی برطانوی حکومت کی غیر ملکی قیدیوں کی جلد رہائی کے بعد انہیں ملک سے ڈی پورٹ کر دینے والی پالیسی کے سبب عمل میں آئی ہے۔

اس پالیسی کے تحت سزا ختم ہونے کے نو ماہ قبل ہی قیدی کو رہا کر دیا جاتا ہے۔

ستائیس سالہ سلمان بٹ کے وکلاء کا کہنا ہے کہ انہیں بدھ کی رات کینٹ کی کینٹربری جیل سے رہا کیا گیا تاہم وہ اب دس سال تک برطانیہ نہیں جا سکیں گے۔

سلمان بٹ کے وکیل بیڈ فورڈ رو نے ایک بیان میں کہا کہ ان کی جلد رہائی ان کی قانونی ٹیم خصوصاً یاسین پٹیل کی کوششوں کا حصہ ہے۔

نامہ نگار مناء رانا کے مطابق سلمان بٹ کے وکیل یاسین پٹیل کا کہنا ہے کہ وہ جمعرات کو لاہور پہنچ جائیں گے اور کرکٹ میں واپسی کی امید کے ساتھ نئے سرے سے زندگی کا آغاز کریں گے۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے سلمان بٹ پر دس سال تک کرکٹ کھیلنے کی پابندی عائد کر رکھی ہے۔

اس سے پہلے سپاٹ فکسنگ الزمات کے تحت برطانیہ میں قید پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان سلمان بٹ کو برطانوی جیل سے قید کی مدت ختم ہونے سے پہلے رہا کر دیا گیا۔

واضح رہے کہ سلمان بٹ کو دو پاکستانی بالروں محمد آصف اور محمد عامر کے ہمراہ سنہ دو ہزار دس میں انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ میچ کے دوران جان بوجھ کر نو بالز کروانے پر جیل بھیج دیا گیا تھا۔

اسی سکینڈل میں ملوث چھتیس سالہ سپورٹس ایجنٹ مظہر مجید کو دو سال آٹھ ماہ کے لیے جیل بھیجا گیا تھا۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here