جگر کی پیوندکاری کا پہلا باقاعدہ مرکز

Posted by on Jun 17, 2012 | Comments Off on جگر کی پیوندکاری کا پہلا باقاعدہ مرکز

 

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں واقع ملک میں جگر کی پیوندکاری کے پہلے مرکز نے باقاعدہ طور پر کام شروع کر دیا ہے۔

تاہم اب شفا انٹرنیشنل ہسپتال میں گزشتہ چھ ہفتوں میں جگر کی پیوندکاری کے چار کامیاب آپریشنوں کے بعد ’لیور ٹرانسپلانٹ سینٹر‘ کا باقاعدہ افتتاح کر دیا گیا ہے۔

اس مرکز کے افتتاح سے قبل جگر کے مریض پیوند کاری کے لیے دیگر ممالک خصوصاً بھارت جاتے تھے جہاں پر اس شعبے میں خاصی مہارت پائی جاتی ہے اور اس پر اخراجات بھی کم ہوتے ہیں۔ تاہم شفا انٹرنیشنل ہسپتال کے حکام کا کہنا ہے کہ ان کے سینٹر میں یہ سرجری بھارت اور ديگر ممالک کی نسبت کم رقم میں ہو جاتی ہے۔

اب تک پاکستان میں جگر کی بیماری میں مبتلا ایسے افراد جنہیں پیوندکاری یا ’ٹرانسپلانٹ‘ تجویز کیا جاتا تھا اس علاج کے لیے بیرونِ ملک جاتے تھے۔

افتتاح کے بعد صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فیصل سعود ڈار کا کہنا تھا کہ ’شفا انٹرنیشنل ہسپتال میں عالمی سطح کی وہ ساری سہولیات موجود ہیں جو کسی بھی لیور ٹرانسپلانٹ سینٹر میں ہونی چاہیے۔ ہمیں امید ہے کہ اس سینٹر کے کھلنے کے بعد پاکستان کے مریضوں کی مشکل آسان ہوگی‘۔

ڈاکٹر ڈار کا کہنا تھا کہ شفا انٹرنیشنل ہسپتال سنہ دو ہزار نو میں اس مقصد سے کھولا گیا تھا کہ آئندہ تین برس میں وہ لیور ٹرانسپلانٹ سینٹر کھولے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں لیور ٹرانسپلانٹ سینٹر کھولنے کی ماضی میں کوشش کی گئی لیکن وہ اس میں کامیابی حاصل نہیں ہوئی لیکن شفا انٹرنیشنل ہسپتال نے اس سرجری سے منسلک تمام طبی پیچیدگیوں اور اس کو درپیش چیلنجز کا جائزہ لینے کے بعد یہ مرکز کھولا ہے۔

اس مرکز میں جگر کی پیوندکاری کے عمل سے گزرنے والے ایک مریض بچے کا کہنا تھا ’میں بہت خوش ہوں اور چاہتا ہوں کہ بڑا ہوکر لیور ٹرانسپلانٹ سرجن بنوں‘۔

واضح رہے کہ جگر کی پیوندکاری ایک مہنگا عمل ہے جس پر دس سے چالیس لاکھ روپے خرچ آتا ہے۔

 

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here