بنگلہ دیش میں ایک خاتون مگرمچھوں کے ہاتھون ہلاک

Posted by on Jun 27, 2011 | Comments Off on بنگلہ دیش میں ایک خاتون مگرمچھوں کے ہاتھون ہلاک

بنگلہ دیش میں ایک خاتون مگرمچھوں کے ہاتھوں اس وقت ہلاک ہو گئیں جب وہ ایک مزار کے تالاب میں مذہبی رسم کے طور پر نہا رہی تھیں۔یہ مزار اپنے تالاب اور اس میں موجود مگرمچھوں کی وجہ سے مشہور ہے۔بنگلہ دیش میں خان جہان علی کا مزار بہت مشہور ہے۔ یہ صوفی بزرگ پندرہویں صدی میں بنگلہ دیش میں آئے تھے۔ان کا یہ مزار اپنے درجنوں ستونوں اور گنبدوں کی وجہ سے بھی مشہور ہے اور اس مزار کو اقوام متحدہ کے ادارے یونیسکو نے دنیا کے ثقافتی ورثے میں شامل کیا ہوا ہے۔اس تالاب میں اس طرح کے واقعات عموما نہیں ہوتے لیکن اسی طرح کا ایک واقعہ تین برس قبل بھی پیش آیا تھا جب مگرمچھوں کے حملے میں ایک شخص ہلاک ہو گیا تھا۔یہ مزار مگرمچوں سے بھرے تالاب کی وجہ سے بھی مش

ہور ہے۔ اس مزار پر آنے والے زائرین ان مگرمچوں کو احترام اور عزت کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور ان کا عقیدہ ہے کہ اگر ان مگرمچوں کی مرغی اور بکری کے گوشت سے تواضع کی جائے تو ان کی دعائیں قبول ہوں گی۔مزار کے منتظمین کا اصرار ہے کہ یہ مگرمچھ پالتو ہیں اور جارحانہ رویہ نہیں رکھتے۔ لیکن اتوار کو ایک ادھیڑ عمر کی عورت پر ان مگرمچھوں نے اس وقت حملہ کر دیا جب وہ ایک مذہبی رسم کے طور پر تالاب میں نہانے کے لیے اتریں۔دو مگرمچھوں نے ان کی ٹانگوں کو دبوچ لیا اور گھسیٹ کر تالاب کے گہرے حصے کی جانب لے گئے۔مقامی لوگوں نے اس عورت کو بچانے کی کوشش کی لیکن ناکام رہے۔ اس تالاب میں اس طرح کے واقعات عموما نہیں ہوتے لیکن اسی طرح کا ایک واقعہ تین برس قبل بھی پیش آیا تھا جب مگرمچھوں کے حملے میں ایک شخص ہلاک ہو گیا تھا۔اتوار کے واقعے سے ان سینکڑوں افراد کی حفاظت سے متعلق سوال پیدا ہو سکتا ہے جو ہر روز خان جہان علی کے اس مزار پر آتے ہیں۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here