ایم کیو ایم اور اے این پی کے کراچی میں جلسے

Posted by on Jun 25, 2012 | Comments Off on ایم کیو ایم اور اے این پی کے کراچی میں جلسے

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں اتوار کو متحدہ قومی موومنٹ اور عوامی نیشنل پارٹی نے مختلف مقامات پر عوامی جلسوں کا انعقاد کیا جن میں رہنماؤں نے شہر میں امن و امان کی صورتحال کے تناظر میں عدم تشدد کی تلقین کی۔

متحدہ قومی موومنٹ نے ایم کیو ایم پختون کنونشن کا انعقاد عزیزآباد میں واقع جناح گراؤنڈ میں کیا جہاں پچاس ہزار کے لگ بھگ کرسیوں کا انتظام کیا گیا تھا۔

تمام حلقوں میں اپنی مقبولیت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اردو بولنے والوں کی طرح پختون بھائی بھی ان سے محبت کرتے ہیں اور ان کی بات مانتے ہیں اور مظاہرے کے طور پر انہوں نے ایک منٹ کی خاموشی کے لیے کہا جس پر مجمع میں سناٹا چھا گیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ علامت ہے محبت، اتحاد اور یکجہتی کی۔ ایک منٹ کی خاموشی کے بعد جلسے کے شرکاء نے بھرپور تالیاں بجائیں۔

الطاف حسین نے پاکستان کی سیاست کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اب حکمراں جماعت وزارتِ عظمٰی کے عہدے کے لیے راجہ پرویز اشرف کو لے کر آئی ہے تاہم سازشیں ہیں کہ ختم ہونے کا نام ہی نہیں لے رہیں۔

انتخابات میں تھوڑا وقت رہ جانے کو بیان کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تمام سیاسی اور مذہبی جماعتوں کو جمہوریت کی بقاء اور استحکام کے لیے صبر و تحمل سے جہاں اتنا انتظار کیا ہے وہاں چند ماہ اور انتظار کرلیں، آنے والے انتخابات میں حصہ لیں، عوام جنہیں کامیاب کریں گے ئحکومت وہ بنائیں گے۔

جلسے کے شرکاء سے ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے لندن سے براہِ راست ٹیلیفون پر خطاب کیا جس میں کراچی میں رہنے والے پختونوں اور ہزارہ کے لوگوں نے خاصی تعداد میں شرکت کی۔

ایم کیو ایم کے سربراہ نے جلسے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا ’ہم سب محنت کرنے والے، جدوجہد کرنے والے، ایک دوسرے کی عزت و احترام کرنے والے لوگ ہیں۔ ہمیں لڑانے والے جاگیردار ہیں، سردار ہیں، وڈیرے ہیں، لٹیرے ہیں، سرمایہ دار ہیں اور بڑے بڑے پیسے والے لوگ ہیں جو خود تو ایک دوسرے کے گھروں میں اپنے بیٹے اور بیٹیاں دے کر شادیاں کرتے ہیں اور ہمیں آپس میں لڑاتے ہیں، ہمیں آج وعدہ کرنا ہے کہ ہم لوگ آپس میں نہیں لڑیں گے۔‘

انہوں نے کہا ’اردو بولنے والے، پشتو بولنے والے، ہندکو بولنے والے یہ وعدہ کریں کہ آج ان کے ہاتھوں سے ایک دوسرے کا خون نہیں بلکہ ایک دوسرے کو ان کی جانیں بچانے کے لیے وہ اپنا خون تو دیں گے، اپنے آپ سے کسی پختون بھائی، بلوچ، سندھی، اردو بولنے والے کا خون نہیں لیں گے۔

انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں کسی کا نام لیے بغیر کہا ’خدا کے لیے ایسی سازشیں نہ کریں کہ جمہوریت کا خاتمہ ہو۔ ملک کی سلامتی اور بقاء صرف اور صرف جمہوریت کے جاری رہنے میں ہے۔‘

:اے این پی کا جلسہ

کراچی کے علاقے کیماڑی میں عوامی نیشنل پارٹی نے کے پی ٹی گراؤنڈ میں جلسہ منعقد کیا جس میں دیگر رہنماؤں کے علاوہ اے این پی کے صوبائی صدر سینیٹر شاہی سید نے خطاب کیا۔

انہوں نے کراچی میں امن و امان کی صورتحال کے پیشِ نظر کہا کہ وہ عدم تشدد کی سیاست پر یقین رکھتے ہیں۔

شاہی سید کا کہنا تھا ’ہم باچا خان کے عدم تشدد کے فلسفے کا پرچار کرتے ہوئے اصولوں کی سیاست پر یقین رکھتے ہیں۔ ہم قوم سے اپیل کرتے ہیں کہ بندوق کی سوچ کو ختم کرے۔‘

جلسہ گاہ میں پشتو زبان کے نغمے گونج رہے تھے جس پر کئی نوجوانوں نے رقص بھی کیا۔

ہم باچا خان کے عدم تشدد کے فلسفے کا پرچار کرتے ہوئے اصولوں کی سیاست پر یقین رکھتے ہیں۔”

سینیئر رہنما شاہی سید

سپریم کورٹ کے فیصلوں پر انہوں نے کہا ’میں چیف جسٹس آف پاکستان کو ان کے فیصلوں پر خراجِ تحسین پیش کرتا ہوں۔ انہوں نے بہت اچھے فیصلے کیے لیکن میں یہاں بارہ مئی کے شہداء کے بارے میں یاد دلانا چاہتا ہوں، اس کے بارے میں آپ کی رائے کیا ہے۔‘

سینیٹر سید نے کہا کہ کراچی میں کئی ادارے ہیں جہاں پختونوں کے ساتھ ناانصافی ہو رہی ہے۔ انہوں نے پپلزپارٹی سے اپیل کی کہ پختونوں کے ساتھ امتیازی سلوک بند کیا جائے اور انہیں بھی ملازمتیں دی جائیں۔

Advertisement

Subscription

You can subscribe by e-mail to receive news updates and breaking stories.

————————Important———————–

Enter Analytics/Stat Tracking Code Here